پاکستان

نوازشریف اور آصف زرداری اپنا لیا ہوا قرض واپس کردیں، ہمیں مانگنے کی ضرورت نھی پڑے گی: فواد چوہدری

لاہور: وفاقی وزیرِ اطلاعات و نشریات فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ پاکستان اپنے طور پر بیرونِ ملک بھیجی گئی بدعنوانی کی رقم کی تحقیقات اور برآمدگی نہیں کرسکتا، اس کام میں وقت درکار ہے۔

ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے فواد چوہدری کہنا تھا کہ نواز شریف اور آصف زرداری کے خاندان کی لوٹی گئی رقم ملکی دولت ہے جسے واپس لانا ضروری ہے۔

پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) اور مسلم لیگ (ن) کے رہنماؤں کی جانب سے کی گئی تنقید میں کہا گیا تھا کہ تحریک انصاف کے رہنما دیگر ممالک سے ’بھیک‘ مانگ رہے ہیں جس پر ردِ عمل دیتے ہوئے فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ اگر نواز شریف اور آصف زرداری اپنے دور میں لیا گیا پاکستان کا 83 فیصد قرضہ واپس کردیں تو وزیراعظم کو باہر جانے کی ضرورت ہی نہیں پڑے گی۔

وزیر اطلاعات کا مزید کہنا تھا کہ سال 2006 میں ملک کا مجموعی قرضہ صرف 60 کھرب تھا لیکن پی پی پی اور مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے اسے 300 کھرب تک پہنچا دیا۔

فواد چوہدری کہنا تھا کہ عمران خان کا کوئی ذاتی ایجنڈا نہیں وہ صرف پاکستان کو فلاحی ریاست بنانا چاہتے ہیں جبکہ اپوزیشن کا ایجنڈا صرف اپنے ذاتی مقاصد کی تکمیل ہے۔

پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کے چیئرمین کے معاملے پر ان کا کہنا تھا کہ بڑی حیرت کی بات ہے چھوٹا بھائی (شہباز شریف) بڑے بھائی (نواز شریف) کی بدعنوانی کا آڈٹ کرے گا۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ یہ پی ٹی آئی حکومت کا حق ہے کہ وہ گزشتہ دورِ حکومت میں عوام کے پیسوں سے بنائے گئے منصوبوں کا آڈٹ کروائے۔

وزیر اطلاعات کے بیان پر ردِ عمل دیتے ہوئے مسلم لیگ (ن) کی ترجمان مریم اورنگزیب کا کہنا تھا کہ ’چوروں‘ نے اپنی بدعنوانی چھپانے کے لیے خیبر پختونخوا کے احتساب کمیشن کو 5 سال تک ناکارہ بنائے رکھا اور اب وہ وہی کام پبلک اکاؤنٹ کمیٹی کے ساتھ بھی کرنا چاہتے ہیں۔

لیک ویڈیو کوئی سنجیدہ معاملہ نہیں

گورنر پنجاب چوہدری سرور نے اسپیکر پنجاب اسمبلی، وفاقی وزیر اور جہانگیر ترین کی ملاقات کی لیک ہونے والی ویڈیو پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ کوئی سنجیدہ معاملہ نہیں۔

فواد چوہدری کہنا تھا کہ پاکستان مسلم لیگ تحریک انصاف کی اتحادی جماعت ہے اور اگر کوئی بعد میں کسی کی شکایت کا تذکرہ کرتا ہے تو اس قسم کی ڈرائنگ روم گفتگو سے پہاڑ نہیں ٹوٹ پڑتا۔

گورنر پنجاب کا مزید کہنا تھا کہ اسپیکر صوبائی اسمبلی اور وفاقی وزیر کو یقین دہانی کروادی گئی ہے کہ وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار اختیارات کا مرکز ہیں اور اس سلسلے میں کوئی ابہام نہیں ہونا چاہیے۔

ان کا کہنا تھا کہ میڈیا نے لیک ہونے والی ویڈیو کے معاملے پر ضرورت سے زیادہ دلچسپی دکھائی۔

دوسری جانب وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے بھی گورنر پنجاب اور اسپیکر صوبائی اسمبلی کے درمیان اختیارات کی کشمکش کی اطلاعات کو بے بنیاد قرار دیا۔

میڈٰیا سے گفتگوکرتے ہوئے انہوں نے تحریک انصاف میں قیادت کے بحران کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ صرف عمران خان پارٹی رہنما ہیں باقی گورنر اور وزیرا علیٰ پارٹی کارکنان ہیں۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

Close